چوہدری پرویز الٰہی اور چوہدری شجاعت کے درمیان صلح ہوگئی
ذرائع کا کہنا ہے کہ چوہدری پرویز الٰہی اور چوہدری شجاعت کے درمیان صلح ہوگئی، دونوں خاندانوں کے درمیان مراسم بحال ہوگئےچوہدری شجاعت نے چوہدری پرویز الہیٰ کو مسلم لیگ ق میں واپسی کی دعوت دی ۔

زرائع کے مطابق پرویزالہیٰ اور چوہدری شجاعت کی ملاقات انکی رہائش گاہ میں ہوئی، چوہدری شجاعت نے چوہدری پرویز الہی مسلم لیگ میں ق میں واپسی آنے کا کہا لیکن مونس الہیٰ پی ٹی آئی میں رہنے پر بضد ہے ، چوہدری پرویز الہیٰ نے چودھردی شجاعت کی پیشکش پر جواب دیدیا۔

ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ سیاسی راستے جدا رہنے کی صورت میں بھی خاندانی تعلقات کو بہتر بنانے پر اتفاق کیا گیا،چوہدری پرویز الہیٰ نے رہائی میں کردار ادا کرنے پر چوہدری شجاعت کا شکریہ بھی ادا کیا ، چوہدری شجاعت اور ایک وفاقی وزیر نے پرویز الہیٰ کی رہائی میں اہم کردار ادا کیا تھا ،چوہدری شجاعت نے رہائی سے ایک روز قبل بھی جیل میں پرویز الہیٰ سے ملاقات کی تھی۔

ذرائع کا مزید کہنا تھا کہ چوہدری شجاعت نے پرویز الہیٰ کو رہائی کے حوالے سے بعض معاملات پر قائل کیا تھا،پرویز الہیٰ نے رہائی کے بعد سیاسی بیانات کو حدود میں رکھنے پر بھی اتفاق کیا ۔

ترجمان مسلم لیگ ق مصطفی ملک نے سماء ٹی وی سے گفتگو میں چوہدری برادران کے درمیان ملاقاتوں اور صلح کی تصدیق کر دی،چوہدری برادران کے درمیان خاندانی تنازعات ختم ہو گئے ہیں ، طویل ناراضگی کے بعد دونوں بھائیوں میں صلح ہونا خوش آئند ہےچوہدری برادران میں سیاسی معاملات پر ڈیڈلاک برقرار ہے ، چوہدری شجاعت کی کوشش ہے کہ سیاسی امور پر ڈیڈلاک کو بھی ختم کیا     جائے

ایک حالیہ انٹرویو کے دوران سلمان خان نے انکشاف کیا کہ وہ اس وقت تک شادی کے بندھن میں بندھنے کا انتظار کر رہے ہیں جب تک کہ وہ صحیح شخص سے نہ ملیں، کیونکہ وہ اپنی شادی کو زندگی میں ایک بار کرنے کا تصور کرتے ہیں۔ انہوں نے سچی محبت تلاش کرنے کی اہمیت پر زور دیا اور ایک ایسی شادی کی خواہش کا اظہار کیا جو ہمیشہ قائم رہے۔

بھارتی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق جب سلمان خان سے غیر شادی شدہ رہنے کے فیصلے کے بارے میں پوچھا گیا تو ان کے والد سلیم خان نے ایک انٹرویو میں انکشاف کیا کہ سلمان رشتوں میں تیزی سے کود جاتے ہیں لیکن اپنے اعلیٰ معیار اور ساتھی سے توقعات کی وجہ سے آگے بڑھنے کے لیے جدوجہد کرتے ہیں۔ سلیم خان نے وضاحت کی کہ سلمان سادگی کی طرف راغب ہوتے ہیں اور آسانی سے کسی کے سحر میں گرفتار ہو جاتے ہیں لیکن وہ شادی کرنے میں ہچکچاتے ہیں کیونکہ انہیں خدشہ ہے کہ جس عورت سے وہ شادی کرتے ہیں وہ اپنی ماں کی طرح پورے خاندان کی دیکھ بھال کرنے کی صلاحیت اور پرورش کی    صلاحیتوں کے مالک نہ ہوں

مزید برآں، انہوں نے ذکر کیا کہ سلمان خان ایک ایسی بیوی چاہتے ہیں جو اپنے شوہر اور بچوں کو ترجیح دے، جیسا کہ ان کی اپنی ماں نے کیا تھا۔ اس میں خاندان کے لیے کھانا پکانا، گھریلو فرائض کا انتظام کرنا، اور اس کے خاندان کو پیار اور توجہ دینا شامل ہے۔ تاہم، انہوں نے تسلیم کیا کہ جدید دور میں، ان روایتی اقدار اور ذمہ داریوں کو مجسم کرنے والی عورت کو تلاش کرنا مشکل ہوتا جا رہا ہے۔

Author

  • ناصر مہدی

    ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کی جدت سے مستفید ہوکر اپنی پیشہ ورانہ لیاقت، جس میں کاپی و سکرپٹ رائٹنگ میں جواں سالی کی فکری توانائی اضافی اوصاف ہیں، کالوہا منوانے والے ویب ایڈیٹر “ہم عوام” ایم فل پولیٹیکل سائنس پنجاب یونیورسٹی سے کرچکے ہیں۔ سیاسیات کے شعبہ سے وابستگی کی بدولت یونیورسٹی کی گلگت بلتستان کونسل کے چئیرمین رہ چکے ہیں۔

    View all posts